زړه ورانوونکي سیلفي عکسونه

نن ټکی اسیا (شنبه، کب۱۵مه ۱۳۹۴ل): د ځوانانو تر منځ په ځانګړي ډول د سیلفي عکس اخېستلو شوق د جنون تر بریده رسېدلی دی. سیلفي اوسمهال د ځوانانو لپاره ښه د ساعت تیري وسیله ده.

په وروستیو کې یو څو روسي ځوانانو بیا داسې خطرناکو ځایونو کې عکسونه اخيستي چې تر ډيره د سړي زړه ورانوي.

ډیلي میل په یوه راپور کې ویلي چې د روسيې د پلازمېنې مسکو اوسیدونکي ایوان سیمینووف له خپلو ملګرو سره د ښار په اسمانڅکو ودانیو پورته دا ډول عکسونه اخيستي چې د کمزوري زړه سړي لخوا یې کتل هم ستونزمن دي.

دې عکسونو کې یو شمېر د ماسکو څو لوړو ودانیو دي، ځينې د هانګ کانګ او یو شمېر د دوبۍ دي.

ایون سیمینووف دا عکس د ماسکو د یوې لوړې ودانۍ پورته اخېستی

تصویر میں ایوان کے ایک دوست نے ایک لڑکی کو ہاتھ سے پکڑ رکھا ہے، جو ایک چھت کے کھلے سوراخ میں سے نیچے لٹک رہی ہے، اس سوراخ میں سے کئی فٹ نیچے موجود سڑکوں کو بھی دیکھا جاسکتا ہے—۔فوٹو/ بشکریہ ڈیلی میل

په دې انځور کې یو هلک یوه انجلۍ له لاسه نیولې. لاندې چت خالي دی او موټر واړه واړه ښکاري. مانا دا چې که انجلۍ خوشې شوې وای، مرګ یې حتمي و.

ایک لڑکی ماسکو کی ایک بلند عمارت کے اوپر کھڑی غروبِ آفتاب کا منظر دیکھ  رہی ہے—۔فوٹو/ بشکریہ ڈیلی میل

ایک بلند عمارت پر ایوان کے دوستوں کا ایک خطرناک پوز—۔فوٹو/ بشکریہ ڈیلی میل

اس تصویر کو دیکھ کر تو یقیناً سب کے  دل کی دھڑکن ایک لمحے کو رک جائے گی—۔فوٹو/ بشکریہ ڈیلی میل

ایوان کی لی گئی ایک تصویر میں انتہائی اونچائی سے ماسکو شہر کا منظر دیکھا جاسکتا ہے—۔فوٹو/ بشکریہ ڈیلی میل

ایوان ایک اونچی عمارت سے سیلفی لیتے ہوئے—۔فوٹو/ بشکریہ ڈیلی میل

ایک اونچی عمارت کی چھت سے لی گئی اس تصویر میں سڑک پر دوڑتی گاڑیاں بالکل کھلونوں کی طرح معلوم ہورہی ہیں—۔فوٹو/ بشکریہ ڈیلی میل

ایوان کے دوست شہر کے بیچوں بیچ ایک بلند عمارت کی چھت پر موجود ہیں—۔فوٹو/ بشکریہ ڈیلی میل

ایوان دبئی کی ایک بلند عمارت کی چھت پر کھڑے شہر کا جائزہ لے رہے ہیں—۔فوٹو/ بشکریہ ڈیلی میل

 

avatar
  ګډون وکړئ  
خبرتیا غوښتل د